رائے ونڈ مارچ کی تیاری کی حتمی شکل ، عمران خان حتمی تاریخ کا اعلان جلد کریں گے

0
260

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ترجمان نعیم الحق نے حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کو خبر دار کیا ہے کہ رائے ونڈ مارچ میں اگر کسی قسم کی بھی رکاوٹ ڈالی تو حالات کی ذمہ دار حکومت خود ہوگی۔ گفتگو کرتے ہوئے نعیم الحق کا کہنا تھا کہ ‘ہم ن لیگ کو یہ واضح کردینا چاہتے ہیں کہ رائے ونڈ مارچ میں جو بھی رکاوٹ ڈالی جائے گی اس کا نقصان ہمیں نہیں، بلکہ حکومت کو ہوگا’ ۔ ان کا کہنا تھا کہ جس طرح سے وزیرِ مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران کو ہستی سے مٹانے کی دھمکی دی، ہم نے اس پر درِ عمل دیتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی درخواست دائر کی۔

انھوں کہا کہ عابد شیر علی اپنے کارکنان کے ساتھ مل کر ہمارے لوگوں کو ڈرا دھمکا رہے ہیں، کیونکہ آپ اگر ماضی پر نظر ڈالیں تو وہ اپنے سیاسی مخالفیں کو قتل کرنے کی کوششیں بھی کرتے رہے ہیں جس کی واضح مثال سانحہ ماڈل ٹاؤن ہے۔

پی ٹی آئی ترجمان کا کہنا تھا کہ ‘اگر عابد شیر علی رائے ونڈ مارچ کے لیے ایسا کوئی بھی منصوبہ بنارہے ہیں تو میں انہیں خبر دار کرتا ہوں کہ یہ سب کرنے سے انہیں بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑے گا اور وزیراعظم نواز شریف کے اقتدار کی کشتی ڈوب جائے گی’۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر ن لیگ نے کوئی ڈنڈا بردار فورس تشکیل دی ہے تو ہماری بھی اپنی سیکیورٹی ہوگی اور ہم بتا دینا چاہتے ہیں کہ ہم ان سے ڈرتے نہیں۔

نعیم الحق کا کہنا تھا کہ رائے ونڈ کسی کی جاگیر نہیں، وہاں پر کئی اور لوگ بستے ہیں، لہذا احتجاج کرنا ہمارا آئینی اور قانونی حق ہے کہ ہم پاکستان کے کسی بھی شہر میں ایک ُپرامن مظاہرہ یا احتجاج کرنا چاہیں تو کرسکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی پہلے ہی یہ بات واضح کرچکی ہے کہ ہمارے احتجاج کا مقصد کسی کے گھر پر حملہ یا اُس کا گھیراؤ کرنا نہیں۔

اس سوال پر کہ کیا آپ کو پہلے سے معلوم تھا کہ اگر آپ رائے ونڈ کا رُخ کریں گے تو حکومت کا رد عمل ایسا ہوسکتا ہے؟ تو انھوں نے کہا کہ ہمیں یہ سب پہلے سے ہی پتا تھا اور ہمارا مقصد بھی یہی تھا کہ حکومت پر دباؤ بڑھایا جائے تاکہ پاناما لیکس کی جو حقیقت نواز شریف اور شہباز شریف نے چھپا رکھی ہے وہ کھل کر عوام کے سامنے آسکے۔

وزیراعظم کی اہلیت سے متعلق الیکشن کمیشن آف پاکستان میں دائر درخواستوں پر بات کرتے ہوئے پی ٹی آئی ترجمان کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ اکتوبر کے مہینے میں ان درخواستوں پر فیصلہ آجائے گا جس کے بعد نواز شریف وزارتِ عظمیٰ کے منصب پر فائز نہیں رہ سکیں گے۔

انھوں نے کہا کہ ہم نے رائے ونڈ مارچ کی تیاری کو حتمی شکل دے دی ہے اور عمران خان حتمی تاریخ کا اعلان کریں گے، کیونکہ لاہور کی تنظیم بھی یہ چاہتی ہے کہ احتجاج ایک ایسے وقت پر کیا جائے جب نواز شریف وطن واپس آجائیں۔خیال رہے کہ پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان نے پاناما لیکس کی تحقیقات نہ کروانے پر لاہور میں ہونے والی حالیہ احتساب ریلی میں حکومت کو عید کے بعد رائے ونڈ کا رُخ کرنے کی دھمکی دی تھی۔

SHARE

LEAVE A REPLY