انکی سزا یہی ہے کہ انکو بھوکے شیروں کے سامنے ڈالیں۔صفدر ھمدانی

0
80

ایک اور حیوان کی ویڈیو منظر عام پرمعلم کے روپ میں اس بھیڑیے کو قانون کے مطابق سزا دلوانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ویڈیو کو زیادہ سے زیادہ شیئر کریں

Posted by Xpose' on Monday, 31 December 2018

کچھ لوگ اس وڈیو کو اس لیئے جعلی یا فیک سمجھ رہے ہیں کہ عقل تسلیم نہیں کر سکتی کہ کیا ایسے معصوم بچوں کے ساتھ اور جو طالب علم بھی ہوں کیا ایسا ظالمانہ اور وحشیانہ سلوک کیا جا سکتا ہے؟ نہیں یہ بالکل درست وڈیو ہے کچھ روز پہلے مجھے بھی کسی نے ارسال کی تھی مذمت کے لیئے لیکن میری ہمت نہیں ہوئی اسے لگانے کی۔۔۔

دراصل یہ معاشرہ قعر مذلت سے بھی آگے نکل گیا ہے مذمت کی لغت میں کوئی ایسا لفظ نہیں ایسے لعنتی لوگوں سے نفرت کا اظہار کر سکے۔معاشرے کی شکست و ریخت اس حد کی ہے کہ اسکے تار پود بکھر گئے ہیں۔ ایسے وحشیانہ مظالم کی متعدد وڈیوز دینی مدارس میں ہونے والے جسمانی اور جنسی مظالم کی موجود ہیں۔اصل مسلہ قانون کی عمل داری نہ ہونا ہے اور اسمیں ملکی سیاست کا بہت بڑا عمل دخل ہے۔ زبان بگڑنے کا عمل دیکھا آپ نے کہ جو زبان سیاست دان استعمال کرتے ہیں وہی عامیانہ زبان اب عوام بھی کرنے لگے ہیں کہ ٹی وی پر دن رات یہی چلتا ہے۔

پنجاب کے وزیر اطلاعات چوہان اور وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری اس رویے کے سرخیل ہیں اور ظاہر انکو اپنے سیاسی بڑوں کی مکمل اشیر باد حاصل ہے۔ دیگر سیاسی جماعتوں میں بھی ایسی ہی زبان و بیان کے لوگوں کی بہتات ہے۔ شدت پسندی ہر سطح پر موجود ہے جہاں دین مذہب میں شدت پسندی ہو وہاں اور کونسا شعبہ بچ سکتا ہے۔ اب ایسے میں یہ کہنا کہ اللہ رحم کرے گا میرے خیال میں اللہ کی رحمانیت کا بہت کڑا امتحان ہے۔ یہ اور ایسے ظالم لوگوں کی بس ایک ہی سزا ہے کہ انکو تین دن کے بھوکے شیروں کے آگے ڈال دیا جائے اور سزا کسی بڑے شہر کے بڑے پارک میں دی جائے اور اسے ملک کے سارے ٹی وی مراکز براہ راست نشر کریں

صفدر ھمدانی

 

SHARE

LEAVE A REPLY