جرمن پراسیکیوٹر نے ایرانی خفیہ ادارے کے لیے جاسوسی کرنے والے پاکستانی شخص پر فردِ جرم عائد کردی۔

وفاقی پراسیکیوٹر کے مطابق 31 سالہ شخص جس کا نام سید مصطفیٰ ایچ بتایا گیا، 2011 سے ایرانی خفیہ ادارے سے رابطے میں تھا۔

جرمن قوانین کی وجہ سے مجرم سے متعلق مزید معلومات بیان نہیں کی گئیں۔

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق جرمن عدالت کی جانب سے جاری بیان میں پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ مصطفیٰ نامی شخص نے جولائی 2015 میں جرمن-اسرائیل تعلقات کو فروغ دینے والے گروپ کے سابق سربراہ کی جاسوسی کا آغاز کیا۔

مجرم پر مذکورہ سابق سربراہ کی معلومات فراہم کرنے کے عوض رقم وصول کرنے کا الزام تھا۔

مشتبہ شخص کو اگر جاسوسی کا مجرم قرار دے دیا جاتا ہے تو اسے 5 سال قید کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY