آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں دی ہیومین تنظیم نے ایک پروقار تقریب کا انعقاد کیا تھا۔دی ہیومین کے پلیٹ فارم سے اس پروگرام کو نئے سال اور کرسمس کیلئے ترتیب دیا گیا تھا۔اس پروگرام کا بنیادی مقصد تنظیم کے خوالے سے لوگوں میں اگاہی مہم چلانا اور ادارے کو عوام کے سامنے اپنی معروضی اور تصوراتی لخاظ سے پیش کرناتھا۔
پروگرام میں زندگی کے ہر شعبے سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور سراہا
پروگرام کا اغاز ڈاکٹر امداد اللہ نےتلاوت کلام پاک سے کیا۔
اسکے بعد (دی ہیومین)کے سربراہ ایگزیکٹیوچیرمین نثار حسین بنگش نے تنظیم کے خوالے سےاپنی تنظیمی حکمت عملی سے تمام شرکاء کو اگاہ کیا۔اسی خوالے سے انہوں نے شرکاء سےمستقبل کے خوالے سے ادارے کے اغراض و مقاصد کو تفصیل سے بیان کیا۔انہوں نے یہ بھی بتاتے ہوئے واضح کیا کہ مستقبل میں ہم اس ادارےکیلئے ایسی حکمت عملی وضع کریں گے۔جس سےتمام لوگوں کو بلا تفریق فائدہ ہوگا۔
اسکے ساتھ ساتھ ایگزیکٹیو چیرمین نثار بنگش نےادارےکی انتظامیہ کے اراکین کو شرکاء سے تعارف اور انکی زمہ داریوں سے شرکاء کو اگآہ کیا
دی ہیومین کے انتظامیہ میں امجدعلی،اقبال حسین،جابرحسین اورگلزارحسین شامل ہے
انوریہ ویلفیئر ایسوسی ایشن کے چیف ایگزیکٹیو سیدجلال حسین نے اپنی تقریر میں (دی ہیومین)ادارے کے متعلق نیک خواہشات کا اظہار کیا اور ادارے کے روشن مستقبل کا عندیہ بھی دیا۔

sydney the humans2
پاکستان ایسوسی ایشن اف آسٹریلیا کے سینئر نائب صدر انصاف علی خان (دی ہیومین )کے حوالےسے اپنی تقریر میں ادارےکے نام کو بہت اہمیت دی
انہوں نے کہا کہ یہ واحدتنظیم ہے کہ حالص انسانی بنیادوں پر بنی ہے۔
عموما تنظیموں کے نام برادریوں کی بنیاد پر رکھے جاتے ہیں۔اور اس ادارے کانام انسانی حدمت کے اصولوں کی بنیاد پر ہے۔اور انشاء اللہ اس کا مستقبل روشن ہے۔
اسکے بعد خنیف بسمی نے (دی ہیومین)کے ساتھ اپنے
نیک خواہشات کا اظہار کیا۔اور کہا کہ ایسے اداروں کو اگے اناچاہیئےجوکہ صحیح معنوں میں بنی نوع انسان کی مدد کریں۔انہوں نے ہر قسم کے تعاون یقین دہانی کرائی۔تاکہ یہ ادارہ مظبوط بنیادوں پر کھڑا رہے اور انسانوں کی حدمت کرتا رہے۔
اخر میں ایک بار پھر ادارے کے سربراہ ایگزیکٹیو چیرمین نثار حسین بنگش نے اپنے دعائیہ الفاظ میں تمام شرکاء اور مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔

جابر حسین

SHARE

LEAVE A REPLY