بے حس اور احسان فراموش قوم پر ” انا للہ وانا الیہ راجعون ” از؛ ڈاکٹر نگہت نسیم

0
2479

ایسی بے حس اور احسان فراموش قوم پر ” انا للہ وانا الیہ راجعون ” از؛ ڈاکٹر نگہت نسیم

بہت دنوں سے ہر طرف شور تھا کہ نگہت نسیم کچھ لکھ نہیں رہیں ۔۔۔

نا کالم ۔۔نا مضمون ۔۔ نا افسانہ ۔۔نا شاعری ۔۔ نا دعا ۔۔ مجھے آپ سب کی محبت کا احترام نا ہوتا تو شاید کبھی نہ لکھ پاتی ۔۔ میرا ماننا ہے کہ ہر انسان کے اندر ان بلٹ سیاہی چوس کی طرح ایک اسفنج ہوتا ہے جو حالات اور واقعات کو اپنے اندر اپنے حساب سے جزب کرتا رہتا ہے اور جب اس کی گنجائش ختم ہو جاتی ہے تو وہ بول پڑتا ہے کبھی صفحہ قرطاس پر کالم ، مضمون ، افسانے کہانیوں کی صورت تو کبھی شاعری کی صورت بکھر جاتا ہے تو کبھی بول پڑتا ہے ۔۔ کبھی چیخ پڑتا ہے تو کبھی اپنے رب کے حضور اوندھے منہ گر کر زارو زار رو پڑتا ہے ۔۔۔فریاد کرتا ہے ۔۔۔ کیونکہ اسے بھی دکھ لگتا ہے ۔۔ اپنوں کے چلے جانے پر ، ان کے بدل جانے پر تکلیف ہوتی ہے ۔۔ اپنے وطن اپنی مٹی سے پیار ہوتا ہے اس پر ہونے والی ہر بد نظمی اسے خاکستر کر جاتی ہے ۔ اس کے گھر پر ہونے والا ہر انتشار اسے بکھیر جاتا ہے ۔ ۔ مجھے نہیں معلوم کہ میں اپنی خاموشی کی وجہ بتا پائی ہوں کہ نہیں ۔۔۔

سیول میں لاکھوں کا مجمع وزیر اعظم کی برطرفی کے لیئے امڈا تھا ۔۔۔ اور وجہ یہ تھی کہ وزیرا عظم کو بد انتظامی اور احتجاجی صورتحال کے پیش نظر عہدے سے برخواست کرنے کا مطالبہ تھا اور جنوبی کوریا کے عوام کو یہ بھی اعتراض تھا کہ یہ سب صدر کی جانب سے اقربا پروری کی وجہ سے ہو رہا ہے کہ صدر پر اقتدار کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنے اہلخانہ اور دیگر قریبی افراد کو بڑے بڑے عہدوں پر فائز کرنے کے الزامات ہیں۔اور اس مشعل بردار مجمع کے احتجاج پر صدر مس پارک نے سابق صدر کے ایڈوائزر کم بیونگ جون کو نیا وزیرا عظم نامز د کر دیا۔ اور اخباروں میں جعلی سرخیوں میں چھپا “جنوبی کوریا کی صدر نے وزیراعظم کو عہدے سے فارغ کردیا “

ان کی صدر ہمارے صدر سے بہت مختلف تھی ۔۔ مس پارک سوچنے سمجھنے کی صلاحیت رکھتی ہیں اور دور اندیش ہیں جو اس عہدے کہ ڈیمانڈ ہے ۔ صدر پاکستان ممنون حسین کی طرح لاکھوں کی ماہانہ تنخواہ پر شوپیس نہیں تھی اسے اپنی عوام کے دکھ درد کا احساس ہو گیا تھا ۔ صدر پاکستان صرف اور صرف نواز شریف کا “ ممنون “ ہے سو لاکھوں بغیر کام کے پا رہا ہے ۔ اقربا پروری کی مثال پاکستان کی ہر بڑی پارٹی ہے ۔ مجھے مزید کیا لکھنے کی ضرورت ہے ۔۔۔۔۔۔ بس اپنی بدقسمتی پر حیران ہوں ۔۔

دوسری خبر کشمیریوں پر بھارت کی ظالمانہ کاروایئوں کی تصویریں اور خبریں ۔۔ سیریا پر رشیا اور جرمنی کا بڑھتا ہوا جنون ۔۔کیا اب یہ باتیں ڈھکی چھی ہیں کہ ایسی ظالمانہ کاروایئوں کے پیچھے کون ہیں ۔۔۔ ؟ اہل اسلام کی پشت پناہی خواہ سعودی عرب کی پیسوں کی مد میں ہو یا دوسرے عرب ممالک کی خاموشی کی مد میں یا پاکستان کی جھوٹی اور بے ایمانہ نعرہ بازی “ کشمیر بنے گا پاکستان “ اور “ دنیا پر اسلام کا پرچم لہرا کر رہے گا “ اور ایسی کئی فرسودہ گھسے پٹے نعرے بازیاں ۔۔۔ کیا مزید لکھوں اس پر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بس اپنی بدقسمتی پر پھر حیران ہوں اور کئی بار ویراں بھی رہی ہوں ۔۔۔۔۔

سوچتی رہی ہوں ۔۔ کیا اہل اسلام میں فی زمانہ کوئی ایسا لیڈر بھی ہے جو بہادر ہو ۔۔اپنی قوم کے لیئے سچا اور ان کا وفادار ہو ۔۔ جو قاتل نا ہو ۔۔ جو کرپشن سے مالا مال نا ہو ۔۔ جو اقربا پروری کے ہنر سے واقف نا ہو ۔۔۔

مسلہ یہ ہے کہ مسلمان قوم سیکھنے کے واسطے پیدا ہی نہیں ہوئی ۔۔ اس نے نمرود سے لے کر نواز تک اپنے دشمنوں کو پہچانا ہی نہیں ۔ اس لیئے نا میری حیات میں اور نا آپ کسی کی حیات میں کچھ بھی بدلنے والا ہے ۔ عمران نے لاکھوں کا مجمع گھر سے گلی تک ہی آیا تھا کہ واپس بھیج دیا ۔۔ کل جنوبی کوریا کے لاکھوں افراد مشعلیں ہاتھ میں اٹھائے سیول میں جمع تھے اور وزیر اعظم کو استعفی دلوا کر ہی گھر پہنچے اور انہوں نے اپنا حدف ایک دن میں پا لیا تھا ۔ یہ سب کیسے ممکن ہوا ۔۔ وہ ایسے کہ انہوں نے گراؤنڈ ورک کیا ہوا تھا ۔ ان کی عدلیہ آزاد تھی ۔۔ ان کی افواج نے کسی کے ہاتھ پر بیعت نہیں کی ہوئی تھی ۔۔۔ سو ان سب باتوں کو مسلمانوں کے ہاں رواج پاتے مزید کئی سو سال لگیں گے ۔

اگر مسلمان سیکھنے والی قوم ہوتی تو آج رنگ و نسل و زبان سے بے نیاز اہل اسلام صرف ” یاحسین سلام ” کا ورد کر رہی ہوتی ۔ جس قوم کے پاس نصاب زندگی ہو ۔۔ جس کے پاس عملی ثبوت ہوں اور ان کے اپنے ہی ہاتھوں ان کے اپنے آباؤ اجداد کی قبریں مسمار ہو جائیں ۔۔۔ ایسی بے حس اور احسان فراموش قوم پر ” انا اللہ وانا الیہ راجعون ” پڑھتے ہیں ۔ پھر کلمہ طیبہ کاورد کرواتے ہیں کہ آنے والی نسلیں پاک و صاف اور عملی اتحاد کی تصویر ہوں

SHARE

LEAVE A REPLY