بھارتی الزامات بے بنیاد ہیں، دفتر خارجہ

0
65

پاکستان نے کلبھوشن یادیو کی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات کے بعد بھارت کی جانب سے لگائے گئے تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارت کو پاکستان کے مثبت اقدام کو تسلیم کرنا چاہیے تھا لیکن ملاقات کو 24 گھنٹے گزرنے کے بعد بھارت نے الزامات کی بوچھاڑ کر دی، پاکستان نے انسانی ہمدردی دکھائی، بھارتی رویے کے بعد یہ کہا جا سکتا ہے کہ نیکی کر دریا میں ڈال۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے ہفتہ وار بریفنگ میں کہا کہ کلبھوشن یادیو کی اہلیہ اور والدہ کیساتھ عزت و تکریم کیساتھ پیش آئے، انسانی ہمدردی کی بنیاد پر یہ ملاقات کرائی گئی جس کو بھارت تسلیم نہیں کر رہا، کلبھوشن یادیو کی اہلیہ جب واک تھرو گیٹ سے گزریں تو جوتے کی وجہ سے الارم بجا، اسلئے جوتا رکھ لیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ جوتے میں موجود میٹل کی تحقیقات کر رہے ہیں، بھارت کا یہ کہنا کہ بھارتی ائیر لائن اور دبئی ائیر لائن سے دونوں خواتین سیکیورٹی کلیئر ہو کر آئیں تھیں اس لئے جوتے میں میٹل کی بات درست نہیں لیکن پاکستان کا یہ موقف ہے کہ خواتین ائیرپورٹ سے ڈائریکٹ دفتر خارجہ نہیں آئیں بلکہ بھارتی ہائی کمیشن کچھ وقت قیام کر کے دفتر خارجہ تشریف لائیں اسلئے سیکیورٹی چیک ضروری تھا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت کی طرح پاکستان کے میڈیا پر کسی قسم کی کوئی پابندی نہیں تھی، پاکستان نے کسی سے کچھ بھی نہیں چھپایا، بھارتی ہائی کمیشن کے اہلکاروں نے 24 دسمبر کو میڈیا کے انتظامات کا جائزہ بھی لیا، بھارتی ہائی کمیشن نے میڈیا کے متعلق کیے انتظامات پر کوئی اعتراض نہیں کیا، ملاقات کی کامیابی کل بھوشن کی والدہ کے ترجمان اور اس کی ٹیم کا شکریہ ادا کرنے سے ظاہر ہے، بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو موقع پر ہی اعتراض کرنا چاہیے تھا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ کابل میں ہونے والے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہیں، نیویارک میں فری بلوچستان بینزر کے حوالے سے تحقیقات کر رہے ہیں، اگر ایسا ہے تو امریکا سے پرزور احتجاج کریں گے، ماہی گیروں کی رہائی سے بھارتی حکومت کو آگاہ کر دیا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY