اہم مسائل شادیاں ،کتابیں،طلاق .عالم آرا وینکوور

0
68

ایسا لگتا ہے کہ ہمارے ملک کے اہم ترین مسائل ہیں ،عمران کی شادیاں طلاقیں اور کچھ لوگوں کی لکھی ہوئی کتابیں ۔الیکشن کا زمانہ ہے سُنتے ہیں کہ وقت پر ہونگے ہماری بھی دعا ہے کہ وقت پر ہی ہوں اور صاف شفاف ہوں ۔لیکن حالات کد ہر جا رہے ہیں شاید کسی کو بھی پتہ نہیں کہ غیب کا علم صرف اور صرف اللہ رب العزت کے پاس ہے ۔کتنے ہی گھوڑے دوڑا لیں ہوگا وہ ہی جو وہ چاہے گا ۔
سابقہ صاحبہ کہتی ہیں بلیک بیری میرے پاس ہے ؟؟؟ کیا ہم سب کے لئے انکی سچائی کی اتنی بات کافی نہیں ہے کہ وہ اپنے سابقہ شوہر کا بلیک بیری لے گئیں بغیر اُسکی اجازت بغیر اُسکے علم میں لائے تو کتنی با ضمیر اور قابل خاتون ہیں کیا یہ اعتراف انکی ذات کو سمجھنے کے لئے کافی نہیں ہے ۔اُن کے پیچھے کوئی بھی نہ ہو تو وہ ایک اور بھی بڑی اخلاقی کمزوری اور بے ضمیری کا شکار ہوئی ہیں کہ انہوں نے خود ہی اپنے کو ظاہر کر دیا کہ وہ ان تمام خدشات پر پوری اُتریں جو اُس وقت سامنے لائے جارہے تھے لیکن خان صاحب نے کسی کی نہیں سُنی تھی ۔شاید اللہ کو منظور تھا کہ وہ ایک اور کڑے امتحان سے گزریں اور عقل کے ناخون لیں ۔فیصلے بہت سوچ سمجھ کر کریں کہ بہت سی ریحام جیسی شخصیات ابھی بھی انکے اندر موجود ہیں ۔اآنکھیں کھلی رکھیں ،ہوش و حواس قائم رکھیں ،اور ان ایلیکٹ ایبل کے چکر میں بھی خود کو سنبھال کر رکھیں ورنہ شاید اُن پارٹیوں سے زیادہ نقصآن اُٹھالینگے جو اب تک ہم سب پر حکومت کرتی رہی ہیں اور ہمارا تماشہ بناتی رہی ہیں ۔اپنے اندر موجود بھیڑیوں کو بھی ڈھونڈیں تاکہ ایسی باتوں سے بچت ہو اور آپ ملک اور قوم کے لئے کچھ کر سکیں ۔
ہماری تو ایک استدعا میڈیا سے بھی ہے کہ خدا را ایسے معاملات کو بس اس حد تک اُٹھایا کریں جہاں تک معلومات دینا ہے یہ باتیں نہ بحث کے قابل ہیں نہ سنائے جانے کے قابل ۔جو لوگ خود اپنی زندگی کو کھولتے ہوئے شرم محسوس نہیں کرتے ان کے لئے کوئی بات بھی اہمیت نہیں رکھتی وہ انتقام اور غصے کی اآگ میں اپنا ضمیر بھی دفن کر دیتے ہیں ۔ہمارا تو ایک ہی سوال ہے کہ جانتے بوجھتے اس شخص کی زندگی میں آپ کیوں داخل ہوئیں جو اتنا خراب تھا ؟ اور وہ رشتہ جس کو سمجھنے اور جاننے میں سالوں درکار ہوتے ہیں کیا دس ماہ میں اآپ نے اس رشتے میں پی ایچ ڈی کر لی کہ تمام پارٹی کو شامل کر لیا اپنی آگ میں ۔ہم یہ سوچنے پر مجبور ہیں کہ ملک کہاں ہے ؟؟ کیا کسی کو اپنے ملک کی عزت اور احترام کا خیال ہے ۔شاید نہیں ورنہ ہماری تعلیمات ہمارا مزہب اور ہماری اقدار ایسی کریہہ باتوں کی اجازت نہیں دیتیں ۔اب اگر آپ اپنی کتاب سے یہ باتیں حزف بھی کر دیں تو شاید آپ کے کردار کو بنایا نہیں جا سکے گا ۔وہ پارٹی جس کا ماضی ان تمام ہتکنڈوں سے بھرا پڑا ہے وہ جب کہتی ہے کہ ہمارا اس میں دخل نہیں تو ہم صرف مسکرا سکتے ہیں ۔
الیکشن فارمز پر جو کچھ گزر رہی ہے وہ ایک طُرفہ تماشہ ہی نہیں ملک اور قوم کے عوام کے ساتھ ایک بھونڈا اور بے وقت مزاق ہے ۔اب آپ اسمبلی میں ہر قسم کے افراد کو دیکھ سکینگے ۔کوئی قد غن نہیں چاہے ڈاکو ایلیکشن لڑے چور یا اُچکا بے ایمان لڑے یا بد دیانت ،کیونکہ ہر وہ شق اُڑا دی گئی جو کہیں نہ کہیں پکڑ لیتی تھی جھوٹ اور دھوکے کو ۔اب چھوٹ ہے کتنا ہی مال باہر ہو کتنی ہی جائیدادیں ہوں ۔بیوی بچے کتنے ہی امیر ہوں شہریت کہیں کی بھی ہو کچھ بتانا ضروری نہیں یہ آسانی ہے پیپلز پارٹی کے لئے کیونکہ اگر زرداری صاحب اور بلاول زرداری ایلیکشن لڑینگے تو بہت ضروری ہے کہ کچھ بھی نہ پوچھا جائے ۔ورنہ ایک اور پاناما کھل جائیگا اس لئے پیپلز پارٹی کے ارکان نے بہت خوبصورتی سے ان فارمز کی تبدیلیوں کو قبول کیا یہ کہہ کر کہ سادگی معیار ہونا چاہئے ۔کاش یہ سادگی معیار ہو حکومتوں کا یہ سادگی معیار ہو آپ کے رہنے سہنے کا یہ سادگی معیار ہو آپ کے معاملات کا کہ جب بھی کوئی بات پوچھی جائے آپ فورا` جواب دے سکیں ۔کہ اتنے سارے بلاول ھاؤس اور دوسری جائیدادیں بنیں کیسے ؟ حکومت میں آتے ہی لوگ کس طرح اتنے امیر ہو جاتے ہیں یہ بھی سادگی سے بتا دیا جائے تو بہت ہی اچھا ہو ۔بابا رحمتے بھی شاید اب تھک گئے ہیں کہ کیا کریں کس طرح مقابلہ کریں ان بلاؤں کا جو پچھلی اسمبلی میں موجود تھیں ۔لیکن کچھ باتیں تو اتنی سامنے ہیں کہ ان کا نقصان ایک بے پڑھے لکھے کو بھی نظر آتا ہے ۔ایک عام شہری بھی کہہ سکتا ہے کہ بھائی مجھے بتاؤ تو کہ جسے ووٹ دوں وہ کتنا قابلِ اعتبار ہے ؟؟؟
پچھلی اسمبلی ہر وہ کام کر گئی جو اس کے بس میں تھا کہ آنے والوں کی راہ میں روڑے ہی نہیں رکاوٹوں کے پُل بن جائیں اور وہ کسی صورت بھی وہ سب نہ کر سکیں جو وہ ملک اور قوم کے لئے کرنا چاہتے ہیں ایسی ایسی مشکلیں راہ میں آئین کہ وہ اپنا آپ پیٹتے رہ جائیں کیا یہ ہی قوم اور ملک سے وفادای ہے،کاش یہ ایلیکشن ہمیں اس بات کی طرف بھی راغب کرے کہ ملک اور عوام سب سے پہلے ہیں پھر اپنی طرف دیکھو ۔بلکہ یقین رکھو کہ ملک ترقی کرے گا قوم خوش ہوگی تو تم خود بہ خود ترقی کر جاؤگے ۔
پانچ رکنی بینچ بٹھا دیا گیا بہت اچھی بات ہے پرانا فارم واپس آنا چاہئے تاکہ ہماری اسمبلی میں اچھے لوگ آسکیں ۔لاہور ھایکورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھنا چاہئے ،الحمدُ للہ کہ عدلیہ نے ایک اور بہت ہی حوصلہ افزا فیصلہ دیا کہ ہر ممبر بنن ےوالے کو حلفیہ بیان دینا ہوگا سب سوالوں کا ۔اور اگر کہیں جھوٹ ہوا تو عدلیہ خود ایکشن لے گی ۔اتنی جلدی فیصلہ ہمیں لگا کہ ہم ایک نئے پاکستان میں داخل ہو رہے ہیں انشاء اللہ
نئے کئیر ٹیکر وزیرِ اعظم باقی سے بھی دو ہاتھ اآگے لگ رہے ہیں وہ اپنے والدین کی قبر پر جس تزک و احتشام سے گئے وہ ہی بہت خوش آئبد ہے دو ماہ ہی صحیح عیش کے لئے کافی ہیں ۔کابینہ کیا ہوگی خوف اآرہا ہے کہ پھر دو پارٹیوں کا دماغ چلے گا ہر قسم کی سیاست کھیلنے کو ۔کاش ملک کی بات کریں ملک کے لئے سوچیں بھول جائیں دوستیاں اور رشتے ۔سارے وہ لوگ کابینہ کا حصہ بن رہے ہیں جو ماضٰی میں کسی نہ کسی طرح ہمدرد اور بہی خواہ رہے ہیں پھر کیسا شکوہ کیسا ملال ۔مگر کہیں نہ کہیں امید کی کرن ہے جب میڈیا شور مچاتا اور سب کو اآگاہ کرتا دکھائی دیتا ہے کہ دیکھو کیا ہورہا ہے ۔؟ اگر سب چوکنا رہے تو شاید اس دفعہ کچھ تبدیلی ہو جائے کچھ اچھے اور ملک کے ہمدرد اسمبلی تک پہنچ جائیں ۔لیکن کاش ہم یہ نہ سنیں کہ ہماری تو بات سنی ہی نہیں گئی اگر نہیں سنی گئی تو شور مچاؤ باہر نکلو ۔بتاؤ کہ کیا ہورہا ہے ۔جب خاموشی سے ختم ِنبوت پر حملہ کردیا جائے تم پڑھو بھی نہیں کہ کیا لکھا ہے ۔جب سارا کا سارا فارم تبدیل کر دیا جائے تمہیں پتہ ہی نہ چلے تو کیسی تبدیلی کہاں کی تبدیلی ۔سب کو ہی سوچنا ہوگا اور ایک نئے جزبے اور نئی سوچ کے ساتھ ان ایلیکشنز میں حصہ ڈالنا ہوگا تاکہ ہم واقعئی ایک ترقی پزیر قوم بن کر سامنے آئیں کہ ہم خود کو بدل کر میدان میں اُترے ہیں ۔
اللہ میرے ملک میں تبدیلی کی ہوا چلائے اچھی اور بہتری کی تبدیلی ۔اور ہماری خواتین کو شر پسند خواتین سے بچائے کہ عورت کے بغیر نہ کوئی ادارہ ہے نہ کوئی ترقی ،نہ کوئی دفتر ہے نہ کوئی میڈیا ،وہ عزت ہے ہم سب کی ،اُسے خود بھی اپنی عزت کرنی چاہئے ،زرا سی کامیابی کے لئے کھلونا نہیں بننا چاہئے کہ ایک دفعہ نظروں سے گر جائیں تو اُٹھنا ناممکن ہوتا ہے ۔اور پڑوسی ملک کے میڈیا پر بیٹھ کر اپنے ملک کی خواتیں کو کچھ کہنا ہم سمجھتے ہیں کہ اخلاقی دیوالیہ پن کی بات ہے ۔

SHARE

LEAVE A REPLY